220

کویت: سول سروس کمیشن نے سرکاری ملازمت سے معطل کیے جانے والے غیر ملکی ملازمین کے واجبات روک لیے

معطل کئے جانے والے غیر ملکی سرکاری ملازمین کو کویت چھوڑنے سے قبل واجبات کی ادائیگی نہیں ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق سرکاری نوکری سے برخاست کئے جانے والے غیرملکی ملازمین کو اس وقت تک واجبات ادا نہیں کئے جائیں گے جب تک وہ کویت کو مستقل طور پر نہیں چھوڑ دیتے۔ کویت سول سروس کمیشن (CSC) نے رواں مالی سال کے لئے مختلف سرکاری ایجنسیوں میں کویتائزیشن (کویتی شہریوں کو نوکریاں دینے) کی شرح پر نظرثانی کرنا شروع کر دیا ہے جبکہ کمیشن نے ان غیر ملکی تارکین وطن کے واجبات کی ادائیگی روک دی ہے جو اپنی سروس ختم کرچکے ہیں اور انہیں اس وقت تک ادائیگی نہیں ہو گی جب تک وہ ملک سے جانے کے لئے اپنے رہائشی اقامہ پر کینسل کی مہر پیش نہ کردیں۔

ذرائع نے وضاحت کی کہ اس اقدام کا مقصد آبادیاتی ڈھانچے میں ترمیم کرنا اور ریاست کا ہدف حاصل کرنا ہے۔ یہ وضاحت بھی کی گئی کہ اگر غیر کویتی ملازم کو نوکری سے برخاست کیا جاتا ہے اور وہ کسی دوسرے شعبے میں منتقل کردیا گیا ہے جیسے نجی شعبہ یا فیملی ویزا (آرٹیکل 22) پر تو جب تک وہ مستقل طور پر ملک چھوڑ کر نہیں جاتا تب تک وہ اپنے واجبات وصول نہیں کرسکتا۔

ذرائع کے مطابق بیورو سرکاری اداروں کی سرکاری ملازمتوں کو لازمی قرار دینے والے 17 دسمبر 2017 کے فرمان سے وابستہ ہے جس میں متنبہ کیا گیا ہے کہ بیورو نے کویتی شہریوں کو بھرتی کرنے میں تاخیر سے متعلق درخواستوں کو مسترد کردیا گیا ہے۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ طبی عملہ اور کچھ تدریسی خصوصیات کے علاوہ غیر کویتی افراد کے لئے کوئی نئے معاہدے نہیں ہیں جو اس بات کا اشارہ ہے کہ بیورو نے سرکاری اداروں میں کویتی شہریوں، کویتی خواتین کے بچوں اور عرب ممالک کے شہریوں کی تقرری کی ترجیح پر عمل کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

ذریعہ: القاباس

ذریعہ: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں