245

کورونا ویکسین کے ذریعے جسم میں چپ داخل کرنے کی ویڈیوز، حقیقت سامنے آگئی

سوشل میڈیا پر کرونا ویکسی نیشن کے ذریعے جسم میں چپ داخل کرنے کی ویڈیوز وائرل، کورونا ویکسین کے خلاف پروپیگنڈا کی حقیقت سامنے آگئی- تفصیلات کے مطابق فیس بک، ٹویٹر، انسٹاگرام سمیت دیگر سوشل پلیٹ فارم پر کورونا ویکسین کے حوالے سے ایسی ویڈیوز گردش کر رہی ہیں، جن میں بتایا جا رہا ہے کہ ویکسین لگاتے وقت شہریوں کے جسم میں چپ ڈال دی جاتی ہے، تاہم اب ان ویڈیوز کی حقیقت سامنے آ گئی ہے- بتایا گیا ہے کہ پاکستان میں کرونا ویکسی نیشن شروع ہونے کے بعد حسب توقع اس کے خلاف مہمات بھی شروع ہوگئیں، سوشل میڈیا پر ویکسین کے خلاف مختلف بے سروپا ویڈیوز کا راز فاش ہوگیا۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک بزرگ بازو پر ویکسین کی انجکشن لگنے والی جگہ پر لوہا چپکا کر دکھا رہے ہیں، ان کا دعویٰ ہے کہ ویکسین کے ذریعے ان کے جسم میں مقناطیسی چپ ڈالی گئی ہے۔

ایک اور صاحب نے بازو پر انجیکشن لگنے والی جگہ پر بلب رکھ کر اسے روشن کر کے دکھا دیا جیسے ان کے جسم میں کوئی برقی لہر دوڑائی گئی ہو۔تاہم ایک نوجوان نے بزرگ کی ویڈیو کا بھانڈا پھوڑ دیا، اس نے دکھایا کہ کس طرح بغل میں مقناطیس دبا لیا جائے تو بازو کے اوپر لوہا چپکنے لگتا ہے، اس مقام کے علاوہ جس میں کہیں اور لوہا نہیں چپکتا۔ مشیر سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے ان ویڈیوز کو پروپیگنڈا قرار دیتے ہوئے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ایسی چیزوں پر کان نہ دھریں، عوام بے فکر ہو کر ویکسی نیشن کروائیں تاکہ وہ کرونا وائرس سے محفوظ ہوسکیں۔       

ذرائع: اردو پوائنٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں