90

تحقیق نے ثابت کردیا کہ اونٹنی کا دودھ ذیابیطس میں انتہائی مفید ہے

اونٹنی کے دودھ پر عرصہ دراز سے تحقیق کی جارہی ہے اور اب تک اس کے کئی فوائد سامنے آچکے ہیں تاہم تازہ ترین تحقیق کے بعد یہ بات واضح ہوئی ہے کہ اونٹنی کا دودھ اپنے اندر بیش بہا خصوصیات رکھتا ہے اور ذیابیطس کے مریضوں کے لئے انتہائی مفید ثابت ہوسکتاہے۔

متحدہ عرب امارات یونیورسٹی نے خاص طور پر اونٹنی کے دودھ کے اینٹی ڈئباٹک خصوصیات کی تحقیقات کرنے کے منصوبے کے لئے مالی اعانت فراہم کی ہے۔ اس منصوبے پر خصوصی توجہ دینے کا مقصد اس دودھ سے مزید فوائد حاصل کرنا ہے خاص طور پر وہ فوائد جن سے ذیابیطس کے مریض مستفید ہوسکیں۔ اونٹنی کا دودھ متحدہ عرب امارات اور دنیا کے بہت سارے حصوں میں ایک مقبول شے ہے۔ یہ ذیابیطس اور کینسر جیسی بیماریوں کے خلاف اپنے علاج معالجے کی وجہ سے جانا جاتا ہے۔ یہ بھی وسیع پیمانے پر نوٹ کیا گیا ہے کہ اونٹنی کا دودھ گلیسیمک کنٹرول کو راغب کرنے کے لئے درکار انسولین کی خوراک کو کم کرتا ہے اور خون میں گلوکوز کو بہتر بناتا ہے۔

مزیدخبریں

وہ کھانے اور مشروبات جن کے استعمال سے تمباکو نوشی ترک کرنا آسان ہے

کویت آنے کے خواہشمند غیرملکی متحدہ عرب امارات سے واپس گھروں کو لوٹنے لگے

1 کروڑ سے زائد افراد کو مسلمان کرنے والے کویتی شہری داعی عبد الرحمن بن حمود السمیط کون تھے؟

اونٹنی کے دودھ کی اینٹی ڈئباٹک خصوصیات کی تحقیقات دنیا بھر میں بہت سارے محققین نے کی ہیں چنانچہ متحدہ عرب امارات کے کالج آف سائنس کے شعبہ حیاتیات سے ڈاکٹر محمد ایوب ، ڈاکٹر ساجد مقصود کی لیب ، متحدہ عرب امارات کے زید سینٹر برائے ہیلتھ سائنسز یو اے ای یو کے تعاون سے ، متحدہ عرب امارات کے محکمہ فوڈ سائنس ، کالج آف فوڈ اینڈ ایگریکلچر کی لیب نے مشترکہ طور پر اونٹنی کے دودھ کی غذائیت اور خصوصیات کا مطالعہ کیا۔ اس مطالعے کا مقصد اونٹنی کے دودھ میں پروٹین حصوں سے جراثیم کش اینٹی ڈئبا ٹک ایجنٹ کی نشاندہی کرنا اور سالماتی سطح پر اس کے عمل کے انداز کو سمجھنا ہے۔ ڈاکٹر ایوب اور ڈاکٹر مقصود نے حال ہی میں ایک مطالعہ شائع کیا ہے جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ اونٹ کے دودھ سے نکالا جانے والا جیوپیوٹک پیپٹائڈس انسانی انسولین ریسیپٹر اور خلیوں میں گلوکوز کی نقل و حمل پر مثبت اثرات مرتب کرتے ہیں۔

اس کے علاوہ ایک اور تحقیق میں اونٹنی کے دودھ میں پروٹین کے علاوہ ذیابیطس سے بچنے والی خصوصیات کے حق میں بھی ثبوت فراہم کیے گئے جس میں ذیابیطس چوہوں میں اینٹی ہائپرگلیسیمیک اثر کا تجربہ کیا گیا۔ یہ نتائج انتہائی امید افزا ہیں اور اونٹ کے دودھ کی بنی مصنوعات کا استعمال کرتے ہوئے ذیابیطس کے خلاف جنگ میں ایک پیشرفت کا باعث بن سکتے ہیں۔

اس طرح اونٹنی کے دودھ کی اینٹی ڈئباٹک ڈیزاسٹ خصوصیات کی تحقیقات سے ذیابیطس کی پیچیدگیوں کو کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے اور متحدہ عرب امارات اور دنیا میں اس دائمی بیماری کے خلاف جنگ میں مدد حاصل کی جا سکتی ہے۔ اس کے علاوہ اس طرح کی دریافتیں متحدہ عرب امارات کی معاشی نمو میں خاص طور پر اونٹنی کے دودھ پر مبنی ذیابیطس کے علاج سے متعلق ادوایات کی دریافت میں اہم کردار ادا کرتی ہیں کیونکہ متحدہ عرب امارات میں اونٹوں کو ایک اہم معاشی وسیلہ سمجھا جاتا ہے۔

اونٹنی کے دودھ کو ذیابیطس کے مریضوں کے لیے مفید قرار دیا جاتا ہے۔ لیکن اونٹ کے دودھ کے بے تحاشہ فوائد اور بھی ہیں جو اس کے باقاعدہ استعمال سے حاصل ہوسکتے ہیں۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں