113

سعودیہ میں لاکھوں ریال کی ڈکیتی کرنے والا پاکستانی گینگ پکڑا گیا

ملزمان نے ایک زیر تعمیر عمارت میں گھُس کر چوکیداروں کو تشدد کا نشانہ بنایا تھا اور پھر 7 لاکھ ریال مالیت کی کیبل لے اُڑے تھے

سعودی عرب میں چند پاکستانی تارکین کی جانب سے جرائم کی وارداتوں سے متعلق خبروں میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔عام طور پر سعودی عرب میں لاکھوں پاکستانی تارکین باعزت طریقے سے اپنا روزگار کما رہے ہیں۔ ان پاکستانیوں نے ویران اور غیر ترقی یافتہ سعودی مملکت کو ایک جدید ترین ، خوش حال اور ترقی یافتہ ریاست بنانے میں بہت بڑا کردار ادا کیا ہے، جس کی سعودی حکومت بھی معترف ہے۔تاہم چند سو افراد ایسے بھی ہیں جو جرائم، غیر قانونی حرکات اور تشدد پسند رویئے کی وجہ سے پاکستانی کمیونٹی کے لیے رسوائی اور شرمساری کا باعث بنتے ہیں۔ ماضی میں ایسے کئی واقعات پیش آتے رہے ہیں۔اب ایک تازہ ترین واقعے میں چھ غیر ملکیوں پر مشتمل ڈکیت گینگ کو گرفتار کر لیا گیا ہے جن میں سے پانچ کا تعلق پاکستان جبکہ ایک کا بنگلہ دیش سے ہے۔مکہ مکرمہ پولیس کے مطابق ملزمان نے ایک زیر تعمیر عمارت میں گھُس کر چوکیداروں کی مار پیٹ کیا اور پھر ان کے ہاتھ پیر باندھنے کے بعد وہاں موجود سات لاکھ ریال مالیت کی کیبل لے اُڑے۔ پولیس نے ملزمان کو پکڑنے کے لیے ایک خصوصی ٹیم تشکیل دی تھی۔ جس نے اس گینگ کا سراغ لگا کر انہیں ان کے ٹھکانوں سے گرفتار کر لیا ہے۔ ملزمان کے قبضے سے چُرائی گئی کیبل بھی برآمد ہو گئی ہے۔ان کے خلاف مقدمہ درج کر کے پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کیا گیا ہے جو تفتیش مکمل کرنے کے بعدانہیں عدالت میں پیش کرے گا۔واضح رہے کہ چند رو ز قبل جدہ میں بھی الیکٹرک کیبلز کی چوری کی وارداتوں میں ملوث 2 پاکستانی شہریوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ملزمان کی عمریں 25 سے 30 سال کے درمیان ہیں جو جدہ شہر میں کئی وارداتیں کر چکے تھے۔ مکہ ریجن پولیس کے ترجمان محمدالغامدی نے بتایا کہ جدہ میں ساٹھ ہزار مالیت کی بجلی کی تاریں چرانے والے غیر ملکیوں کو گرفتار کیا گیا ہے جن کا تعلق پاکستان سے ہے۔ملزمان زیر تعمیر عمارتوں سے کیبل چُرا کر بازار میں فروخت کر دیا کرتے تھے۔ مختلف وارداتوں کے نتیجے میں ملزمان نے مجموعی طور پر 60 ہزار ریال کی الیکٹرک کیبلز چُرائی تھیں۔ اسی ماہ کے دوران ریاض میں چوری کی ایک بڑی واردات میں ملوث 6 پاکستانی گرفتار کیے گئے تھے جنہوں نے ایک کمیونیکیشن کمپنی کے ہیڈکوارٹر میں داخل ہو کر وہاں سے 70 ہزار ریال اور 1 لاکھ 30 ہزار ریال مالیت کے ری چارج کارڈ چرائے تھے۔چوری کی اس بڑی واردات کے بعد پولیس نے ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی جس نے ملزمان کا سراغ لگا کر ان کے ٹھکانوں سے گرفتار کر لیا ہے۔ ملزمان کی عمریں 20 سے 40سال کے درمیان ہیں۔ یہ ملزمان مملکت میں غیر قانونی طور پر مقیم تھے۔ ملزمان کے ٹھکانے سے چرائی گئی رقم کا کچھ حصہ بھی برآمد ہو گیا تھا، اس کے علاوہ چوری شدہ کارڈز بھی مل گئے تھے۔

ذرائع: اردو پوائنٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں