115

امارات میں مشہور برانڈز کی نقل پر تیار کیا گیا جعلی سامان فروخت ہونے لگا

عجمان پولیس نے کروڑوں درہم مالیت کی ایک لاکھ سے زائد جعلی اشیاء ضبط کر لیں

متحدہ عرب امارات میں ہمیشہ اشیاء کے معیار پر بہت زیادہ توجہ دی جاتی ہے۔ حکومت کی جانب سے جعلی سامان و اشیاء فروخت کرنے والوں کے خلاف بھرپور کارروائی کی جاتی ہے۔ تاہم کچھ جعلساز بڑی ہوشیاری سے بین الاقوامی برانڈز کی نقل تیار اور فروخت کر کے خریداروں کو دھوکا دینے کی کوشش کرتے ہیں۔ اماراتی ریاست عجمان کی پولیس نے بتایا ہے کہ گزشتہ تین سالوں کے دوران ریاست میں جعلی اشیاء فروخت کرنے والوں کے خلاف بھرپور کریک ڈاؤن کیا گیا ہے۔عجمان پولیس کے مطابق ریاست میں بین الاقوامی برانڈز کی نقل ایک لاکھ 20 ہزار جعلی اشیاء ضبط کر لی گئی ہیں جن کی مالیت 8168155 ڈالر بنتی ہے۔ضبط شدہ مال میں جعلی ڈیزائنروں کی گھڑیاں، دستی بیگ، سن گلاسز، کپڑے اور دوسری اشیاء شامل ہیں۔

عجمان پولیس کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل پولیس آپریشنز بریگیڈئیر جنرل خالد محمد النعیمی نے بتایا ہے کہ ان کے شعبہ تفتیش جرائم کو عجمان میں واقع مختلف دکانوں پرجعلی اشیاء فروخت ہونے کی اطلاع ملی تھی لیکن ان پر مشہور لگژری ٹریڈمارک کندہ تھے۔ان میں سے بعض برانڈز میں لوئی ووئتن ،گوچی ، باس ، ہرمز،چینل ، ڈائیر،کارٹائر ، فینڈی اور رولیکس شامل ہیں۔انھوں نے بتایا کہ شکایت موصول ہونے کے بعد پولیس نے دکانوں پرچھاپا مار کارروائی کی ہے اور ان جعلی اشیاء کو قانونی طور پرضبط کر لیاہے۔امارات میں جعلی اشیاء کے دھندے کی روک تھام کے لیے مختلف اقدامات کیے جارہے ہیں اور اسی بنا پرمئی کے آخر میں اس کا نام امریکا کی حقوق دانش کی واچ لسٹ سے خارج کردیا گیا تھا۔اماراتی وفاقی کسٹمز اتھارٹی (FCA) کے مطابق 2019ء میں 67 دکانوں سے 168251جعلی اشیاء کو برآمد کرکے ضبط کیا گیا تھا۔FCAکی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مملکت میں ای کامرس کے فروغ کی وجہ سے 2019ء میں 2018ء کے مقابلے میں ڈاک اور ایکسپریس کھیپوں کے ذریعے آنے والی بہت سی اشیاء ضبط کر لی گئی تھیں۔برانڈز کے نام پر تیار کی گئی جعلی اشیاء کی زیادہ تر کھیپ فلپائن سے امارات بھجوائی گئی تھیں۔

ذرائع: اردو پوائنٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں