128

سعودی عرب میں ظالم باپ نے دس سالہ بیٹے کو قتل کر دیا

سعودی شہری اپنے بیٹے کو آبادی سے دُور لے گیا اور پھر چھُری کے متعدد وار کر کے قتل کر ڈالا ،حکام نے قاتل کا سر قلم کر دیا

سعودی عرب میں ایک ظالم والد نے اپنے کم سن بیٹے کی جان لے لی ۔ جس کے صلے میں عدالت نے اس شقی القلب والد کوسزائے موت سُنا ئی تھی جس پر عمل کرتے ہوئے گزشتہ روز اس کا سر قلم کر دیا گیا ہے۔ تاہم اس قتل کی وجوہات معلومات نہیں ہو سکی ہیں۔ سعودی میڈیا کے مطابق ایک مقامی شہری نے اپنے دس سالہ بیٹے کو چھُری کے متعدد وار کر کے اس کی جان لے لی تھی۔اس ظالم والد کو جازان میں موت کی سزا سُنا دی گئی ہے جس پر عمل کرتے ہوئے گزشتہ روز اس کا سر قلم کر دیا گیا ہے۔ وزارت داخلہ کے مطابق سعودی شہری محمد بن عبداللہ سویدی اپنے بیٹے عبداللہ کو دھوکے سے آبادی سے دُور لے گیا تھا۔ اور پھر اس سنسان مقام پر اسے چھُری کے کئی وار کر کے ہلاک کر ڈالا۔

ملزم اس واردات کے بعد انجان بن گیا تھا اور بیٹے کی لاش ملنے پر رونے پیٹنے کا ڈراما بھی کرتا رہا۔تاہم پولیس نے شک پڑنے پر اس سے پوچھ گچھ کی تو ساری حقیقت سامنے آگئی تھی، جس کے بعد اسے گرفتار کر کے سرکاری استغاثہ کے حوالے کیا گیا تھا۔ فوجداری عدالت نے محمد سویدی کو اپنے بیٹے کی جان لینے کے جُرم میں موت کی سزا سُنائی تھی۔اس فیصلے کے خلاف مجرم نے پہلے اپیل کورٹ اور پھر سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی تاہم اس کی اپیل مسترد کرتے ہوئے فوجداری عدالت کا سزائے موت کا فیصلہ برقرار رکھا گیا تھا۔ایوانِ شاہی کی جانب سے عدالتی فیصلے پر عمل کرتے ہوئے گزشتہ روز اس کا جازان کے میدان میں سر قلم کر دیا گیا۔ واضح رہے کہ کچھ عرصہ قبل ایک سعودی شہری کو اپنے ہم وطن کو جان بوجھ کر گاڑی تلے کُچل کر ہلاک کرنے کے جُرم میں سزائے موت سنائی گئی ہے۔ اس شخص نے کسی جھگڑے کی بناء پر اپنے ایک جاننے والے کو دو بار گاڑی تلے کُچل ڈالا تھا اور پھر جائے وقوعہ سے فرار ہو گیا۔ اس ہولناک واردات کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی جس میں اس شخص کی سفاکی ظاہر ہو رہی تھی۔

ذرائع: اردو پوائنٹ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں