202

مصرمیں بچے کو شہد لگا کر کیڑوں کے آگے ڈالنے والےسفاک والد کی تلاش

مصر میں ایک شخص نے اپنی بیوی کا انتقام اپنی کم سن بچے سے لیتے ہوئے انسانیت کی تمام حدیں پھلانگ دیں۔ اس نے بچے کو باندھ کر اس پر شہد چھڑکا اور اسے کیڑے مکوڑوں کے آگے ڈال دیا۔ والد کے ہاتھوں اپنے بچے کو اس طرح کی سفاکیت اور تشدد کا نشانہ بنانے کی اور کہیں کوئی مثال نہیں ملتی۔ سفاک شخص خود فرارہوگیا جس کی تلاش جاری ہے۔ سوشل میڈیا پر اس خبر کے وائرل ہونے کےبعد عوام میں شدید غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے۔

یہ واقعہ شمالی مصر کے القلیوبیہ گورنری کے ایک دیہات میں پیش آیا۔

تفصیلات کے مطابق ایک شخص نے اپنی بیوی سے انتقام لینے کے لیے اپنے کم سن بچے کو باندھا اور اس پر شہید چھڑک کر اسے کیڑوں کے آگے ڈال دیا۔

مصر میں انسانی حقوق کے ایک عہدیدار ولید مصطفیٰ نے پولیس کو اس واقعے کی رپورٹ دی اور بتایا کہ ایک خاتون نے تصدیق کی ہے کہ اس کے شوہر نے کم سن بچے کو شہید لگا کر کیڑوں کے آگے ڈال دیا۔

پولیس نے موقعے پر پہنچ کر بچے کودیکھا جو کیڑوں میں گھر چکا تھا۔

ولید مصطفیٰ نے بتایا کہ بچے کی عمر سات سال ہے جو شبین القناطر کا رہائشی ہے۔ پولیس کو رپورٹ دینے کے بعد بچے کی ماں بچے شوہر کے ظلم کےخوف سے اسے کے ایک دوسررے گائوں چلی گئی۔

دوسری طرف پولیس نے بچے پر تشدد کے مرتکب مفرور والد کی تلاش شروع کردی ہے۔ اس کی تلاش اور گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

دوسری طرف ستم رسیدہ خاتون کا کہنا ہے کہ اس کا شوہر اس پر وحشیانہ تشدد کرتا اور بچے کو تشدد کا نشانہ بنانے کے لیے نئے نئے حربےاستعمال کرتا ہے۔ ان میں ایک شہد لگا کر حشرات الارض کے سامنے پھینکنے کا سفاکانہ طریقہ بھی شامل ہے۔ بچے کو کھانے پینے سے محروم رکھنے جیسے حربے بھی استعمال کیے جا چکے ہیں۔

ذرائع: العربیۃ اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں