115

مکرمہ میں خانہ کعبہ کے اندر جراثیم کشی کے لئے دس سمارٹ روبوٹ متعارف کرا دئیے گئے

مسجدالحرام میں جراثیم کشی کے لئے روبوٹس متعارف کروا دیئے گئے جو خود کار نظام کے ذریعے مسجد کو جراثیم سے پاک رکھنے کے لیے کام کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق مکہ مکرمہ میں خانہ کعبہ کے اندر جراثیم کشی کے لئے دس سمارٹ روبوٹ متعارف کرائے گئے ہیں۔ سعودی حکام نے بتایا کہ یہ سمارٹ مشینیں ہر 5 سے 8 گھنٹے کے لئے خودکار کنٹرول سسٹم کے مطابق چلتی ہیں۔ دونوں مساجد کے گرینڈ پریسیڈنسی برائے امور کے مطابق روبوٹ ایک خودکار کنٹرول سسٹم کے مطابق چھ سطحوں پر کام کرتے ہیں جس سے محفوظ صحتمند اور ماحولیاتی ماحول اور جراثیم کشی کے تقاضوں کا زبردست تجزیہ کیا جاسکتا ہے۔

مسجد میں ماحولیاتی روک تھام اور وبائی امراض کے شعبے کے سربراہ حسن السوحیری نے بتایا کہ بیٹری سے چارج کیے جانے والے یہ روبوٹ بغیر کسی انسانی مداخلت کے پانچ سے آٹھ گھنٹے کام کرسکتے ہیں۔ یہ مشین جس میں ابتدائی انتباہ کی خصوصیت ہے۔ اس میں 23.8 لیٹر جراثیم کش کے لئے سپرے کرنے والے مادے کی گنجائش ہے جس میں دو لیٹر فی گھنٹہ خرچ ہوتا ہے۔ روبوٹس میں نقشوں کو چارٹ کرنے کے لئے ایک اعلی راڈار کیمرہ لگایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر تصدیق شدہ روبوٹ حجاج اور نمازیوں کو کورونا وائرس سے بچانے کے لئے مسجد الحرام میں خودکار جراثیم کشی نظام کا ایک حصہ ہیں۔ اکتوبر میں سعودی عرب نے کوویڈ 19 کے خلاف سخت احتیاطی تدابیر اپناتے ہوئے تقریباً سات ماہ کی معطلی کے بعد عمرہ کو بتدریج دوبارہ شروع کرنے کا منصوبہ شروع کیا تھا۔ 4 اکتوبر سے شروع ہونے والے اس منصوبے کے پہلے مرحلے میں 6،000 عمرہ زائرین کو ہر روز مسجد میں عبادت کی اجازت دی گئی تھی۔ دوسرا مرحلہ 18 اکتوبر کو عمل میں آیا جس میں ایک دن میں 40،000 نمازی اور 10،000 عازمین حج کو اس مسجد میں عبادت کی اجازت دی گئی تھی تاہم نومبر میں شروع ہونے والے تیسرے مرحلے کے مطابق یومیہ 20،000 عمرہ زائرین اور 60،000 نمازیوں کو مسجد میں داخل ہونے کی اجازت دی گئی تھی۔

اپریل میں سعودی حکام نے اعلان کیا تھا کہ کوویڈ 19 کے خلاف صرف “حفاظتی ویکسین لینے والے افراد کو ہی مسجدالحرام میں عمرہ ادا کرنے اور مدینہ میں مسجد نبوی کی زیارت کرنے کی اجازت ہوگی۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں