418

بھارتی ڈیلٹا کورونا وائرس کویت میں داخل ہو گیا

کویت میں بھارتی ڈیلٹا کورونا وائرس کے کیس کا انکشاف کیا گیا ہے۔

روزنامہ الرای کی رپورٹ کے مطابق وزارت صحت نے آج بروز پیر کے روز ملک میں بھارتی ڈیلٹاہ کورونا وائرس کے مختلف قسم کے کیسوں کے انکشاف کا اعلان کیا ہے۔ وزارت صحت کے سرکاری ترجمان ڈاکٹر عبداللہ السناد نے اعلان کیا ہے کہ کویت میں چند بھارتی کیسوں کی مختلف قسم سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوگئی ہے جسے بھارتی نڈین کورونا وائرس کہا جاتا ہے۔ السناد نے مزید بتایا کہ وزارت وقتا فوقتا کویت میں پائے جانے والے تغیر پذیر وائرس کے طرز کو جاننے کے لئے وائرس کے جینیاتی ٹیسٹ کرواتی ہے۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ “ڈیلٹا میوٹیٹڈ” جسے انڈین میوٹیٹڈ کے نام سے جانا جاتا ہے اب تک دنیا کے 62 سے زائد ممالک میں پھیل چکا ہے۔ السناد نے شہریوں اور رہائشیوں کو اس وائرس کے اثرات سے نمٹنے کے لئے اقدامات اور احتیاطی تدابیر اپنانے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے رہائشیوں اور شہریوں سے درخواست کی کہ

وہ ویکسین کے لئے جلد از جلد اندراج کریں، منہ اور ناک ڈھانپنے کے لئے ماسک پہنیں ، جسمانی فاصلہ برقرار رکھیں ، ہاتھ صاف رکھیں اور غیر محفوظ اجتماعات سے گریز کریں۔ دوسری جانب ہندوستانی طبی ماہرین نے کہا ہے کہ اس نئے وائرس سے گھبرانے کی ضرورت نہیں جسے دنیا کی طرف سے اسے “ڈیلٹا +” کا نام دیا گیا ہے۔

ماہرین نے بتایا کہ اس حقیقت کے باوجود کہ “ڈیلٹا +” انفیکشن پھیلانے میں تیز تر ہے اور ہندوستان میں منظور شدہ ویکسینوں کی مزاحمت کرنے میں زیادہ قابل ہے اس کے باوجود اس بات کا ثبوت نہیں مل سکا کہ علامات اور اثرات کے لحاظ سے یہ وائرس زیادہ مہلک یا شدید ہے۔ ابتدا میں سائنس دانوں نے نئے “ڈیلٹا” کا نام ‘AY.1’ کوڈ دیا جس کی وضاحت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ہندوستان میں اس کے ساتھ انفیکشن کی تعدد نسبتا کم ہے۔

ہندوستانی نیوز ویب سائٹوں نے دہلی کے سی ایس آئی آر انسٹی ٹیوٹ کی ویکسین اور امیونولوجی کے ماہر ونود سکریہ کے حوالے سے بتایا ہے کہ “نیا تغیر پذیر (ڈیلٹا +) K417N کوڈ کو لے جانے والے تغیر کے نتیجے میں ظاہر ہوا تھا اور پروٹین جس کے ذریعے وائرس انسانی خلیوں کی جھلیوں میں داخل ہوتا ہے۔ ” اب تک “ڈیلٹا +” ہندوستان، یورپ ، ایشیاء اور براعظم امریکہ کے متعدد ممالک میں ظاہر ہوچکا ہے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں