392

کویتی شہریوں نے قتل ہونے والے بھارتی ڈلیوری ڈرائیور کے اہل خانہ کے لئے خطیر رقم جمع کرلی

 قتل کئے جانے والے بھارتی ڈیلیوری ڈرائیور کے خاندان کے لئے 18 گھنٹے کی قلیل مدت کے دوران 30 ہزار دینار سے بھی ذیادہ فنڈ جمع کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق روزنامہ القبس کے توسط سے اور “نامہ چیریٹیبل سوسائٹی” کے تعاون سے حقوقِ انسانیت کے پیشِ نظر بھارتی ڈلیوری ڈرائیو شیخ پاشا کے اہل خانہ کی کفالت کے لئے چندہ جمع کرنے کی مہم کا آغاز کیا گیا جس کے نتیجے میں صرف 18 گھنٹے کی قلیل مدت کے دوران 30 ہزار 400 دینار کی خطیر رقم جمع کرلی گئی۔ 18 گھنٹوں سے بھی کم عرصے میں عوام نے دل کھول کر عطیات دیئے جو تقریباً $100,000 ڈالر بنتے ہیں جو اس مہم کے مختص شدہ ہدف کی حد سے زیادہ ہے جس کا تخمینہ 30،000 دینار ہے۔ روزنامہ القبس نے اس مہم کا آغاز منگل رات دس بجے “ان کی مدد کرنا ہمارا فرض ہے” کے عنوان سے کیا تھا۔ شیخ پاشا کے ساتھی علی خواجہ کی ویڈیو کلپ

کے ذریعے سوشل میڈیا پر پلیٹ فارم کے ذریعے شروع کی گئی تھی جس میں انہوں نے شیخ پاشا کے اہل خانہ کے دکھوں کا مداوا کرنے کا مطالبہ کیا تھا اور واضح کیا تھا کہ مقتول شیخ پاشا اپنے خاندان کا واحد کفیل تھا۔ انہوں نے عوام سے چندہ دینے کا مطالبہ کیا انہوں نے کہا کہ پاشا ملازمت میں اپنی وفاداری اور دیانتداری کے نتیجے میں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھا کیونکہ اس نے اس کمپنی کی ملکیت “الیکٹرک اسکوٹر” قاتل کے حوالے کرنے سے انکار کردیا تھا۔ خواجہ نے وضاحت کی کہ

پاشا کے انتقال کے بعد ان کے اہل خانہ کی زندگی آسان نہیں ہوگی خاص طور پر چونکہ وہ اپنے اہل خانہ کے لئے واحد کفیل تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ مرحوم پاشا کی بیوی اور دو بیٹیاں ہیں بڑی بیٹی کی عمر 10 سال ہے جبکہ دوسری بیٹی کی عمر 8 سال کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مقتول نے سن 2019 سے اپنے خاندان کو دیکھنے کے لئے سفر نہیں کیا تھا اور آخری بار اپنی بیٹیوں کو اس وقت دیکھا جب وہ 7 اور 5 سال کی تھیں نیز ان کے والد ایک ماہ قبل ہی انتقال کر گئے تھے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں