250

امیرالقطر کی ہدایات پر پاکستان کو طبی امداد پہنچا دی گئی

 امیرالقطر شیخ تمیم بن حمد الثانی کی ہدایات پر پاکستان کو طبی امداد پہنچا دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی کی ہدایات پر عمل درآمد کرتے ہوئے قطر فنڈ فار ڈویلپمنٹ کی طرف سے بھیجی گئی طبی امداد کی کھیپ اسلامی جمہوریہ پاکستان پہنچا دی گئی۔ یہ امداد کورونا وائرس (کوویڈ 19) سے نمٹنے کے لیے پاکستان کی کوششوں کے لیے ریاست قطر کی حمایت کے طور پر بھیجی گئی ہے۔ اس امداد میں 50 آکسیجن ڈیوائسز اور ادویات شامل ہیں۔ یہ امداد اسلام آباد میں قطر کے سفارت خانے کے تعاون سے فراہم کی گئی ہے جہاں پاکستانی فوج کے میڈیکل ونگ کے

عہدیداروں نے اسلام آباد ایئرپورٹ پر ترسیل وصول کی۔ امداد کی یہ کھیپ اسلامی جمہوریہ پاکستان کے لیے پہلی ہے جبکہ مزید طبی امداد کی ترسیل ہوگی۔ اس موقع پر قطر فنڈ فار ڈویلپمنٹ کے ڈائریکٹر جنرل جناب خلیفہ الکواری نے اس بات پر زور دیا کہ یہ طبی امداد بہت اہمیت کی حامل ہے تاکہ قطر کی ریاست کی طرف سے وائرس کے اثرات سے نمٹنے کے لیے کی جانے والی عظیم کوششوں کی تکمیل ہو۔

الکواری نے مزید کہا کہ مشترکہ بین الاقوامی ذمہ داری کی بنیاد پر ریاست قطر اس وبا کا مقابلہ کرنے کے عمل میں سب سے آگے ہے۔ اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ “قطر کی ریاست اپنی دانشمندانہ قیادت میں ہچکچائی نہیں اور برادرانہ و دوست ممالک کو وبا کے پھیلاؤ کو محدود کرنے اور روکنے میں اپنا مثبت کردار ادا کررہی ہے۔” اپنی طرف سے اسلامی جمہوریہ پاکستان میں قطر کے سفیر شیخ سعود بن عبدالرحمن الثانی نے کہا کہ جہاں قطر کی ریاست نے اندرونی صورتحال کو مضبوط بنانے اور اسے وبائی امراض اور اس کے مختلف اثرات سے بچانے کے لیے کام کیا ہے وہیں اپنے دوست ممالک کے تئیں اپنا انسان دوست فریضہ نبھانا بھی نہیں بھولا۔

امیر القطر نے نشاندہی کی کہ قطر کی ریاست نے “کوویڈ 19” بحران کے دوران دوست ممالک کے ساتھ اپنے موقف اور یکجہتی کی تصدیق کی ہے اور انہیں مدد فراہم کرنے کی تمام کوششوں کو بروئے کار لایا ہے۔ یہ نوٹ کرتے ہوئے کہ “کوویڈ 19” کے آغاز سے بحران کے دوران ریاست قطر نے مختلف بین الاقوامی تنظیموں کے علاوہ تقریبا 80 ممالک کو فوری طبی امداد فراہم کی ہے۔

امیر القطر شیخ تمیم الثانی نے ریاست قطر اور پاکستان کے مابین نمایاں دو طرفہ تعلقات کی تعریف کی اور زور دیا کہ ” ریاست قطر اسلامی جمہوریہ پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو بہت اہمیت دیتی ہے اور یہ مدد دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کی مضبوطی کی تصدیق کرتی ہے۔ قطر کی ریاست پاکستانی حکومت اور عوام کے ساتھ کھڑی ہے اور اس امید کا اظہار کرتی ہے کہ یہ مدد پاکستانی عوام کو وبا سے بچانے میں حکومت اسلامی جمہوریہ پاکستان کی کوششوں کو مضبوط بنانے میں معاون ثابت ہوگی۔”

یہ قابل ذکر ہے کہ قطر کی ریاست کی جانب سے برادر اور دوست ممالک کو فراہم کی جانے والی یہ طبی امداد وائرس کے پھیلاؤ سے نمٹنے کے لیے کی جانے والی کوششوں کے فریم ورک کے اندر آتی ہے ۔ مشترکہ بین الاقوامی ذمہ داری اور برادر و دوست ممالک کی حمایت میں ریاست قطر کی پوزیشن کی بھی تصدیق کرتا ہے اور اس بحران پر قابو پانے میں ان کی مدد اور تعاون کا ثبوت ہے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں