124

کویت میں کورونا سے ہونے والی اموات میں دیگر ممالک کی نسبت نمایاں کمی

کورونا وبائی مرض کے باعث ہونے والی اموات کے اعدادوشمار دنیا کے دیگر ممالک کے مقابلے کویت میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔

شہریوں اور رہائشیوں سے تیسری بوسٹر CoVID-19 بوسٹر ڈوز لینے کے حکومتی مطالبات کے پیش نظر مشرف نمائشی گراؤنڈز میں کویت ویکسی نیشن سنٹر کو سیکڑوں افراد نے اس بات کا واضح اشارہ دیا کہ لوگ ویکسین کی تیسری خوراک لینے کی اہمیت کو سمجھتے ہیں کیونکہ متعلقہ حکام مسلسل کوششیں کر رہے ہیں کہ ملک میں وبائی امراض کی صورتحال پر نظر رکھیں اور کویت انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر آنے والے مسافروں پر احتیاطی تدابیر اختیار کرتے رہیں۔ ملک میں کورونا وائرس کی وبائی صورتحال میں بہتری کے نئے اشارے میں روزنامہ القبس نے صحت کے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ

بعض ممالک میں نئے میوٹینٹ اومیکرون کے ابھرنے کے باوجود کویت میں گزشتہ نومبر میں وائرس سے ہونے والی پیچیدگیوں کے نتیجے میں صرف 4 اموات ریکارڈ کی گئی ہیں جبکہ اکتوبر میں 12 اموات کے کیس، ستمبر میں 30 ، اگست میں 99 ، جولائی میں 355 ، جون میں 194، مئی میں 203 ، اپریل میں 244، مارچ میں 228، فروری میں 124 اور اس سال جنوری میں 23 اموات ریکارڈ کی گئیں۔ فروری 2020 کے آخر میں پہلے کیس سامنے آنے کے بعد کویت میں کوویڈ19 سے ہونے والی اموات کی کل تعداد

0.6 فیصد کی شرح سے کل 413,491 انفیکشنز میں سے 2,465 اموات تک رہی۔ سعودی عرب میں اس وباء سے کل 549,877 متاثرہ افراد میں سے 8,842 اموات ہوئیں جس کی شرح 1.6 فیصد رہی۔ متحدہ عرب امارات میں وائرس سے ہونے والے انفیکشن کی وجہ سے ہونے والی اموات کی تعداد 2148 رہی جو کہ 74,214 انفیکشنز کا 0.2 فیصد تھا۔ سلطنت عمان میں 304,581 انفیکشنز میں سے 1.3 فیصد کی شرح سے 4,113 اموات، بحرین میں 1,394 اموات ہوئیں جو کہ اس بیماری سے متاثر ہونے والے کل 277,803 افراد میں سے 0.5 فیصد کی شرح تھی۔ قطر میں وائرس سے ہونے والی کل 244,071 انفیکشنز میں

سے 611 اموات جس کی شرح 0.2 رہی۔ عرب ممالک کی سطح پر مصر میں مجموعی انفیکشن سے کورونا کی پیچیدگیوں سے ہونے والی اموات کی شرح 5.7 فیصد، یمن میں 19.4 فیصد، مراکش میں 1.5 فیصد، الجزائر میں 2.8 فیصد، اردن میں 1.2 فیصد، شام میں 5.7 فیصد تک پہنچ گئی۔ اور لبنان میں 7 فیصد، عراق میں 1.1 فیصد، لیبیا میں 1.4 فیصد، فلسطین میں 1 فیصد، تیونس میں 3.5 فیصد، سوڈان میں 7.2 فیصد، جنوبی سوڈان میں 1 فیصد، صومالیہ میں 5.7 فیصد اور موریطانیہ میں 2.1 فیصد تھی۔ صحت کے ذرائع نے عرب خلیجی ریاستوں کی نسبت کویت میں کورونا سے اموات کی کم شرح کی وجہ درمیانی عمر اور نوجوانوں کی اعلیٰ فیصد کے ساتھ ساتھ انسداد وائرس ویکسین کی زیادہ شرح کو قرار دیا۔ دنیا بھر کے دیگر ممالک

خلیجی صحت کے حکام کے علاوہ جدید ترین محفوظ علاج اور تکنیکی پروٹوکول کو لاگو کرتے ہیں جو جدید ترین صحت کے نظاموں کے ذریعے استعمال کیے جاتے ہیں۔ ذرائع نے روزنامہ کو بتایا کہ کویت میں وائرس کے انفیکشن سے پیدا ہونے والی پیچیدگیوں کی وجہ سے اموات کی شرح اب بھی دنیا میں سب سے کم ہے جس سے صحت کے نظام کی مضبوطی اور علاج کے پروٹوکول کی تاثیر کی تصدیق ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحت کی بڑھتی ہوئی آگاہی ملک میں انفیکشن کی شرح کو کم کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں