176

کویت ہوائی اڈے کے طریقہ کار میں فی الحال کوئی تبدیلی نہیں ہوئی

کویت میں ‘Omicron’ کے پہلے کیس کی تشخیص کے بعد ہوائی اڈے کے طریقہ کار میں فی الحال کوئی تبدیلی نہیں ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق کویت نے افریقی ممالک میں سے ایک سے کویت آنے والے یورپی مسافر کا دوسرا پی سی آر ٹیسٹ کرنے کے بعد اومیکرون وائرس کا پہلا کیس ریکارڈ کیا۔ مسافر کو منظور شدہ COVID-19 ویکسین کی دو خوراکیں موصول ہوئی تھیں جبکہ متاثرہ مسافر عالمی ضروریات کے مطابق وزارت صحت کے پروٹوکول کے مطابق کویت پہنچنے کے بعد سے قرنطینہ میں ہے۔ یورپی مسافر منفی PCR ٹیسٹ سرٹیفکیٹ کے ساتھ کویت میں داخل ہوا تھا۔ کویت پہنچنے پر دوبارہ پی سی آر ٹیسٹ کرایا گیا جس کی رپورٹ منفی آئی لیکن

کچھ دنوں بعد دوسرے پی سی آر ٹیسٹ کا نتیجہ مثبت آیا۔ ذرائع نے بتایا کہ یورپی مسافر کا کسی سے رابطہ نہیں تھا اور اس کی صحت مستحکم ہے اور علامات بھی شدید نہیں ہیں۔ اسے فوری طور پر ایک انسٹی ٹیوٹ میں قرنطینہ کر دیا گیا۔ ذرائع نے یہ بھی مطالبہ کیا کہ

نئے میوٹینٹ کی تحقیق کا دائرہ دیگر دوسرے افریقی ممالک تک بڑھایا جائے حتیٰ کہ ان افریقی ممالک میں بھی جنہوں نے ابھی تک اپنے ملک میں میوٹینٹ کی ظاہری شکل کا اعلان نہیں کیا ہے تاکہ کسی بھی کیس کو ملک میں داخل ہونے سے روکا جا سکے۔ صحت کے تقاضے وہی ہیں ان میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے جس میں ماسک پہننا، فاصلہ برقرار رکھنا، ہاتھ دھونا اور اپنی صحت اور دوسروں کی صحت کی حفاظت کے لیے ویکسی نیشن کروانے میں

پہل کرنا شامل ہے۔ ہوائی اڈے کے حکام نے ملک میں آنے والے تمام شہریوں کے لیے اپنے صحت کے طریقہ کار کو تیز کر دیا ہے۔ ذرائع نے زور دے کر کہا کہ ” ہوائی اڈے کے حکام صحت کے حکام کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں جبکہ کل شام تک اس سلسلے میں کوئی نئی ہدایات موصول نہیں ہوئیں”۔

ذرائع: کویت اردو نیوز

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں