135

امریکہ میں‌ طوفانی بگولوں کی زد میں آکر 70 افراد ہلاک، عمارتوں‌ کی چھتیں‌ اڑ گئیں

امریکہ میں چھ ریاستوں میں طوفانی بگولوں کی زد میں آکر 70 افراد ہلاک ہوگئے ہیں، طوفانی بگولوں نے 200 میل تک اپنے راستے میں آنے والے گھروں اور دیگر عمارتوں کو بھی شدید نقصان پہنچایا ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق کینٹکی میں اس بلائے ناگہانی نے اس فیکٹری کی چھت کو اڑا کر رکھ دیا جس میں 110 افراد کام کر رہے تھے۔ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ طوفانی بگولے کی زد میں آنے والی اس فیکٹری میں‌ درجنوں افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

کینٹکی کے گورنر نے کہا ہے کہ اس حادثے کے بعد 40 کارکنوں کو بچا لیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’میں نے اتنی تباہی کبھی نہیں دیکھی۔‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’صبح ہمیں یقین تھا کہ 50 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔ اب یہ تعداد 70 ہے اور ہلاکتیں 100 سے زائد بھی ہو سکتی ہیں۔‘

گورنر کا کہنا تھا کہ 189 نیشنل گارڈز امدادی سرگرمیوں‌ میں مصروف ہیں جن کی توجہ ایک چھوٹے شہر مے فیلڈ پر ہے۔

مے فیلڈ میں فائر اور پولیس اسٹیشن تباہ ہوگئے ہیں اور وہاں انتظامیہ کو امدادی کاموں میں دشواری کا سامنا ہے۔

ایک فیکٹری ورکر کا کہنا تھا کہ ’ہم ہوا کی آواز سن سکتے تھے۔ پھر ایک زور دار آواز کے ساتھ سب کچھ ہمارے اوپر گر گیا۔‘

سوشل میڈیا پر پوسٹ ہونے والی تصاویر اور ویڈیوز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مے فیلڈ میں اینٹوں سے بنی عمارتیں زمین بوس ہو گئی ہیں اور گاڑیاں ان کے ملبے کے نیچے دبی ہوئی ہیں۔

ہوا کے اس طوفان اور بگولوں کی وجہ سے ریاست کینٹکی، الی نوائے، کنسا، میزوری، ٹینیسی اور مسی سپی میں کاروبارِ زندگی متاثر ہوا ہے۔

ذرائع: اے آر وائے نیوز اردو

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں